میں نے پارٹی آئین بنایا،بانی ممبر کی رکنیت معطل نہیں کی جا سکتی

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے حامد خان کو شوکاز نوٹس جاری ہونے اور پارٹی رکنیت معطل ہونے پر حامد خان کا بھی جواب سامنے آگیا۔

حامد خان کا کہنا ہے کہ میں نے پارٹی آئین بنایا۔بانی ممبر کی رکنیت معطل نہیں کی جا سکتی۔عمران خان کی طرح کسی بھی فاؤنڈر کو معطل نہیں کیا جا سکتا۔کل پارٹی میں آنے والے ہمیں پارٹی سے نکالنے کی کوشش کر رہے ہیں۔


حامد خان نے مزید کہا کہ مجھے ابھی تک معطلی اور شوزکاز نوٹس موصول نہیں ہوا۔جب نوٹس آئے گا تو اس کا جواب بھی دوں گا،

انہوں نے پارٹی کی رکنیت معطلی کو مذاق قرار دے دیا۔حامد خان نے مزید کہا میں نے کبھی ایسا بیان نہیں دیا جو پارٹی پالیسی کے خلاف ہو ہمیشہ حقائق پر بات کی۔واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے حامد خان کی بنیادی رکنیت معطل کردی۔

پاکستان تحریک انصاف نے پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی پر ایکشن لیتے ہوئے پارٹی رکن اور ایڈووکیٹ سپریم کورٹ حامد خان کو شو کاز نوٹس جاری کردیا اور ان کی بنیادی رکنیت بھی معطل کردی ہے۔

حامد خان پر جھوٹے بیانات کے ذریعے پارٹی کو بدنام کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔نوٹس میں کہا گیا کہ حامد خان نے الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا میں پارٹی اور چیئر مین سے متعلق من گھڑٹ بیانات دئیے، حامد خان کے بیانات سے پارٹی ممبران اور ورکرز کو ٹھیس پہنچی، پارٹی چئیرمین پر الزام تراشی کے ذریعے پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کی گئی۔


پی ٹی آئی نے حامد خان سے 7 دن میں جواب طلب کرتے ہوئے کہا کہ جواب نہ دینے کی صورت میں پارٹی سے بے دخل کیا جائے گا جب کہ حتمی فیصلے تک حامد خان کو میڈیا میں پارٹی مخالف بیانات دینے سے بھی روک دیا گیا ہے۔تاہم حامد خان کا کہنا ہے کہ مجھے تاحال شوکاز نوٹس نہیں ملا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں